سٹیسیاستکاروبار

ایس ایم تنویر کی زیر صدارت اجلاس میں پنجاب کی پہلی سکلز پالیسی 2023 کے مسودے کی منظوری دی گئی

لاء ڈیپارٹمنٹ پالیسی کے قانونی پہلوؤں کا جائزہ لے کر صوبائی کابینہ کی منظوری کیلئے بھجوائے گا، صوبائی وزیر صنعت و تجارت

لاہور(خبر نگار)صوبائی وزیر صنعت و تجارت ایس ایم تنویر کی زیر صدارت پنجاب سکلز پالیسی 2023 کے مسودے کا جائزہ لینے اور سفارشات مرتب کرنے کے حوالے سے تشکیل دی گئی کمیٹی کا اجلاس ٹیوٹا سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا، وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر پر تشکیل دی گئی کمیٹی نے صوبے کی پہلی ”پنجاب سکلز پالیسی 2023 ء“ کے مسودے کی منظوری دی، لاء ڈیپارٹمنٹ پالیسی کے قانونی پہلوؤں کا جائزہ لے کر منظوری کے لئے پنجاب کابینہ کو بھجوائے گا، مجوزہ پالیسی کے تحت ٹیوٹ سیکٹر کے اہداف طے کر دئیے گئے ہیں، پالیسی کے مطابق تین سکل ٹیکنالوجی پارک بنائے جائیں گے، مارکیٹ کی ضرورت کے مطابق ہنر مند افرادی قوت تیار کی جائے گی۔20 سنٹر آف ایکسی لینس بنائے جائیں گے،لیبز کو جدید آلات سے آراستہ کیا جائے گا، صوبائی وزیر صنعت و تجارت ایس ایم تنویر نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا مستقبل معیاری فنی تعلیم کے فروغ سے جڑا ہے۔ اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے پہلی بہترین سکلز پالیسی تیار کی گئی ہے، لاء ڈیپارٹمنٹ پالیسی کا جائزہ لے گا اور پالیسی منظوری کے لئے کابینہ کو بھجوائی جائے گی، انہوں نے کہا کہ مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق ہنر مند افرادی قوت کی تیاری وقت کی ضرورت ہے۔ٹیکنیکل ایجوکیشن کے معیار کو بہتر بنائے بغیر مثبت نتائج حاصل نہیں کئے جا سکتے۔ بریفنگ کے دوران اجلاس کو بتایا گیا کہ پنجاب میں پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر میں 1123ادارے نوجوانوں کو مختلف ہنر سکھا رہے ہیں،وزیر اعلی کے مشیر برائے لاء کنور دلشاد، سیکرٹری صنعت و تجارت احسان بھٹہ، ڈی جی پی ایس ڈی اے معظم سپرا، چیف آپریٹنگ آفیسر ٹیوٹا، سینئر اکنامک ایڈوائزر، لاء اور خزانہ کے محکموں کے افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button