سٹی

نولکھا پریسبیٹیرین چرچ میں کرسمس کی آمد کی خوشی میں تقریب

سیکرٹری انسانی حقوق ڈاکٹر محمد شعیب اکبر کی خصوصی شرکت

لاہور ( خبر نگار) دسمبر کا مہینہ آتے ہی کرسمس کی خوشیاں شروع ہو جاتی ہیں اور پاکستان بھر میں مسیحی کمیونٹی کیجانب سے مختلف تقریبات کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ اسی تناظر میں لاہور میں قائم نولکھا پریسبیٹیرین چرچ میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ سیکرٹری انسانی حقوق واقلیتی امور ڈاکٹر محمد شعیب اکبر نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی جبکہ تقریب میں پاکستان بھر سے پریسبیٹیرین عہدیداران بالخصوص ماڈریٹرز ، بشپس، پادریوں اور سیاسی و سماجی شخصیات نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ خطبہ استقبالیہ میں ریورنڈ ڈاکٹر مجید ایبل نے کہا کہ آج کے دن ہم محکمہ انسانی حقوق کے سیکرٹری ڈاکٹر محمد شعیب اکبر کا شکریہ ادا کرنا چاہتے ہیں کہ ان کی ذاتی دلچسپی کے باعث مسیحی برادری کے نکاح لائسنس اور طلاق ایکٹ پر تیزی سے کام ہو رہا ہے جبکہ میرج ایکٹ کی ترامیم میں چرچز کی رضامندی شامل کی جارہی ہے۔ پہلی مرتبہ محکمہ انسانی حقوق نے طلاق کے عمل کو متعلقہ یونین کونسل سے رجسٹرڈ کروانا لازمی بنایا ہے جبکہ 80 سے زائد مختلف پاسٹرز کی درخواستوں کے حوالے سے ایک لیٹر ڈرافٹ کیا جا رہا ہے تاکہ جب تک پالیسی ریویو نہ ہو جائے تب تک لائسنس بحال کرائے جائیں۔ سیکرٹری انسانی حقوق ڈاکٹر محمد شعیب اکبر نے اپنے خطاب میں مسیحی برادری کو کرسمس کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب نے مذہبی اقلیتوں کے لیے بے شمار اقدامات کیے ہیں جبکہ حال ہی میں 1184 اسٹوڈنٹس کے لیے اسکالر شپ لائے ہیں اور ان میں زیادہ تعداد مذہبی اقلیتوں کے بچوں کی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگلے پانچ سال کے لیے پیف کے توسط سے اسکالر شپس کی رقم بڑھانے پر کام جاری ہے جبکہ مذہبی اقلیتوں کے لیے ہائر ایجوکیشن میں دو فیصد کوٹہ شامل ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اپنے بچوں کو تعلیم کی طرف ضرور لائیں تاکہ حقیقی امپاورمنٹ آ سکے۔تقریب میں پریسبیٹیرین ایجوکیشن بورڈ کی سربراہ ڈاکٹر ویڈا جاوید ، بشپس،
پاسٹرز اورپادری حضرات کو تحائف سے نوازا گیا۔ تقریب میں مظلوم کشمیریوں اور فلسطینوں کے لیے خصوصی دعاء بھی کرائی گئی جبکہ کرسمس کی خوشی میں کیک بھی کاٹا گیا۔تقریب میں پاسٹر ایلڈر جاوید حمید، ریورنڈ نوشین خان،
ریورنڈ خرم دستگیر، مسز ویڈا جاوید، پادریز نسیم اختر، ممتاز، عرفان، رحمت عاصم، شفاقت، شاہد جبکہ سرگودھا پریسبیٹیرین ، کراچی پریسبیٹیرین اور سرگودھا کے ماڈریٹرز نے بھی شرکت کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button