سٹیسیاست

سیپ پاکستان اور بیداری سیالکوٹ کا مشترکہ طور پر بلدیاتی نظام پر صوبائی کانفرنس کا انعقاد

کانفرنس میں صوبہ پنجاب میں بلدیاتی نظام کی اہمیت اور شفاف حکمت عملی پر روشنی ڈالی گئ

لاہور (خبر نگار) سیپ پاکستان اور بیداری سیالکوٹ نے مشترکہ طور پر بلدیاتی نظام پر صوبائی کانفرنس کا انعقاد کیا۔ کانفرنس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے نمائندگان نے شرکت کی ۔ جن میں مسلم لیگ ن سے عظمیٰ کاردار،جماعت اسلامی سے انیلہ محمود،استحکام پاکستان پارٹی سے سعدیہ سہیل وغیرہ شاملِ تھیں جبکہ پنجاب یونیورسٹی سے پروفیسر ڈاکٹر امجد مگسی،ماہر لوکل نظال سلمان عابد، ڈپٹی ڈائریکٹر سیپ عرفان مفتی وغیرہ نے بھی شرکت کی۔
کانفرنس میں صوبہ پنجاب میں بلدیاتی نظام کی اہمیت اور شفاف حکمت عملی پر روشنی ڈالی گئ جبکہ سیپ پاکستان کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر تحسین جاوید نے کانفرنس کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی
۔ کانفرنس میں پنجاب میں بلدیاتی نظام مثالی بنانے کے حوالے سے مختلف تجاویز پیش کی گئیں، اکثریت کی رائے تھی کہ سیاسی اور جمہوری نظام کے باعث بلدیاتی نظام پروان چڑھ سکتا ہے۔ کانفرنس میں ایک پینل ڈسکشن کا بھی اہتمام کیا گیا جس میں صباحت رضوی سیکرٹری لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن ،راحیل کامران چیمہ ممبر پنجاب بار کونسل نے خصوصی طور پر شرکت کی ۔ کانفرنس میں ماہر لوکل گورنمنٹ سلمان عابد کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے 23 سال سے لوکل نظام سست روی کا شکار رہا ہے۔ آرٹیکل 32 کے تحت سیاسی جماعتوں کی ذمہ داری بڑھ جاتی ہے تاہم سب کو ملکر ایک روڈ میپ تشکیل دینا ہوگا ۔ پنجاب یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر امجد مگسی نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی میں نوجوانوں کو لوکل گورنمنٹ کا ڈپلومہ کروایا جا رہا ہے ۔مقامی حکومتوں کا نظام ہی پارلیمانی نظام کی بنیاد ہے۔ نوجوانوں کو مقامی حکومتوں کی ذمہ داریاں سونپنا ہوں گی۔ ایکس ڈائریکٹر لوکل نظام اکیڈمی نجیب اسلم نے کہا کہ نوجوانوں کے ذریعے ہی مقامی حکومت مضبوط ہوگی۔ دنیا بھر میں بہترین لوکل نظام چل رہا ہے ۔ پینل ڈسکشن میں عرفان مفتی، ڈپٹی ڈائریکٹر SAP-Pk، صدر بیداری ارشد محمود مرزا نے شرکت کے دوران اس بات پر زور دیا کہ عام انتخابات میں تمام جماعتوں کو اپنے منشور میں بلدیاتی انتخابات پر زور دینا چاہیے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button