سٹی

آج غزنویؒ زندہ ہوتے تواسرائیل غزہ میں غدر نہ مچاتا: محمدناصراقبال خان

معتوب فلسطینیوں کو مدد کی ضرورت پڑی توعالم اسلام میں قیادت کاقحط پڑگیا

لاہور(خبر نگار)انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی چیئرمین محمدناصراقبال خان نے کہا ہے کہ اگر آج سلطان محمود غزنویؒ زندہ ہوتے تواسرائیل غزہ میں یوں غدر نہ مچاتا۔غزہ میں بدترین کشت وخون اور غذا کی قلت دنیا بھرکے مسلمانوں کیلئے ذلت کامقام ہے، اقوام مردہ بھی اپنی اہمیت کھوبیٹھا۔ معتوب فلسطینیوں کو مدد کی ضرورت پڑی توعالم اسلام میں قیادت کاقحط پڑگیا۔طاقت ہو تے ہوئے قاتل کو بیگناہوں کے قتل عام سے نہ روکنا بھی شریک گناہ ہونا ہے۔ہم نہتے فلسطینیوں کی بے بسی سمجھ سکتے ہیں لیکن مسلمان حکمرانوں کی بے حسی ناقابل فہم ہے۔اپنے ایک بیان میں محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ فلسطینی ہزاروں شہداء کے وارث ہیں،ان کادکھ اورکرب دیکھا نہیں جاتا۔افسوس مسلمان حکمران آبرومندانہ اورجرأتمندانہ انداز سے اسرائیلی بربریت کیخلاف مزاحمت کرناتودرکناراس ناجائز ریاست کی مذمت کرنے کیلئے تیار نہیں۔انہوں نے کہا کہ آج اقتدار اورطاقت ہوتے ہوئے بھی جواسرائیلی فسطائیت کیخلاف مجرمانہ طورپر خاموش ہے تو مورخ کااسے فلسطینیوں کے قتل عام میں شریک مجرم ٹھہرانا بجا ہوگا۔فلسطینیوں کیخلاف اسرائیل کی بدترین بربریت کے باوجودمسلمان حکمرانوں کی مجرمانہ خاموشی اختیارکرنادرحقیقت اجتماعی خودکشی کرنے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانیت کے حامی زندہ ضمیرانسان دنیا بھر میں اسرائیلی شیطانیت کیخلاف سراپااحتجاج ہیں۔امریکا سمیت دنیا کی مقتدر قوتوں کوآشیرباد اسرائیل کے ساتھ ہے لیکن مسلمان حکمران فلسطینیوں کے آگے تودرکنار ان کی پشت پر بھی کھڑے ہونے کیلئے تیار نہیں۔انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے بارود کے بل پر ہزاروں فلسطینیوں کوشہید کردیا جبکہ جوزندہ بچے تھے وہ غذاسمیت پانی نہ ملنے پرشہادت کاجام نوش کررہے ہیں۔مسلمان ملکوں کے منافق اور بزدل حکمران روز محشر کس منہ سے اللہ تعالیٰ کی عدالت میں پیش ہوں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button