سٹی

شاہراہوں پرشہریوں کے حقوق روندے جارہے ہیں: محمد ناصر اقبال خان

کیا آج تک حکمران اشرافیہ اوران کے عزیزواقارب نے اس طرح آٹا لیا ہے اسیر سیاسی کارکنان کورہا اورانتقامی بنیادوں پران کیخلاف درج مقدمات کاخارج کیاجائے

لاہور (خبرنگار) انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی چیئرمین محمد ناصر اقبال خان نے کہا ہے کہ ریلیف کی آڑ میں شاہراہوں پرشہریوں کے حقوق روندے جارہے ہیں۔نااہل حکمرانوں نے پوائنٹ سکورنگ کیلئے خوددار پاکستانیوں کاوقار تار تار کردیا۔مفت آٹا کی فراہمی سیاست رشوت کے سوا کچھ نہیں تاہم اس کے عوض نادار لیکن خوددار عوام اپنی سیاسی وفاداریاں نیلام نہیں کریں گے ۔پولیس کاشرپسندعناصر کی بجائے سیاسی کارکنان پرتشدد اورالٹا ان کیخلاف کریک ڈاﺅن ایک بڑا سوالیہ نشان ہے۔اسیر سیاسی کارکنان کورہا اورانتقامی بنیادوں پران کیخلاف درج مقدمات کاخارج کیاجائے۔اپنے ایک بیان میں محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ مادروطن پاکستان کے ساتھ محبت ہمارے خون میں شامل ہے ، قائداعظمؒ اورہمارے باپ دادا نے اشرافیہ کی عیش وعشرت کیلئے پاکستان نہیں بنایا تھا۔کیا قیام پاکستان سے آج تک حکمران اشرافیہ اوران کے عزیزواقارب نے اس طرح آٹا لیا ہے جس طرح وہ نادارومفلس شہریوں کود ے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مٹھی بھرپوش طبقہ نے سفید پوش طبقہ کوبھکاری بنادیا ،ان سے جمہوری سیاسی آزادی کے بعد عزت نفس بھی چھین لی ۔ حکمرانوں نے عوام کی زندگی میں آسانیاں پیداکرنے کی بجائے ان کیلئے زندہ رہنا مزید دشوارگزاربنادیا ۔انہوں نے کہا کہ شہریوں کوان کی عزت نفس اورخودداری کی قیمت پرمفت آٹا فراہم کرناایک فراڈ ہے۔پاکستان کے غیور عوام دو دنوںکے طعام کیلئے اپنی عزت پرآنچ نہیں آنے دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ عہدحاضر میں وقت بیش قیمتی ہے ،اگر دن بھر کی خواری کے بعدعوام نے آٹا لیا بھی توکیا لیا ۔قوم کی باوفا،باصفا،باحیاءاورپردہ دار ماﺅں ،بہنوں اوربیٹیوں کومفت آٹا دینے کے نام پررسوا کیا جارہا ہے ، ہم اس طرز حکومت کی شدید مذمت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ نے ایک ضعیف خاتون کے ہاں بچوں کوبلکتا دیکھا تو اس کی ضرورت پوری کرنے کیلئے بوری خود اٹھالی تھی لیکن کوتاہ اندیش حکمرانوں نے عام آدمی کی جھکاناتودرکنارقوم کی کمر توڑدی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button