انٹر نیشنل

پاکستان کے روس سے تیل خریدنے کے معاہدے کے مخالف نہیں، امریکا

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ان خیالات کا اظہار امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ہفتہ وار پریس بریفنگ میں کیا جب ان سے صحافی نے روس کے پاکستان کو سستے داموں پیٹرول کے پہلے آرڈر سے متعلق سوال کیا تھا۔

ترجمان امریکی وزارت خارجہ نے یہ بھی کہا کہ اس بات کو یقینی بنانے کی بھی ضرورت ہے کہ روس کی پیٹرول سے خریداری صدر پوٹن کی جنگی جارحیت کو توانا کرنے کا سبب نہ بنے۔

معاہدے کے تحت پاکستان روس سے صرف خام تیل خریدے گا۔ اگر پہلا لین دین آسانی سے مکمل ہوجاتا ہے تو درآمدات 100,000 بیرل یومیہ (bpd) تک پہنچنے کی توقع ہے۔

یاد رہے کہ جی 7 گروپ اور امریکا سمیت کئی مغربی ممالک نے روس سے پیٹرول خریداری پر پابندی عائد کی ہوئی ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button