تعلیمسٹی

فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کاپانچواں کانووکیشن

فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی سے ملحقہ تینوں ہسپتال دکھی انسانیت کی خدمت میں صحت کی بہترین سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔ بلیغ الرحمن گورنر پنجاب

لاہور (خبر نگار)
فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی میں 5ویں کنووکیشن کا انعقاد ہوا۔ چانسلر / گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمن نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ وزیرِ صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم اورسیکرٹری محکمہ صحت پنجاب ڈاکٹر احمد جاوید قاضی نے خصوصی طور پر شرکت کی۔کنووکیشن میں پبلک پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے سربراہان ،وائس چانسلرز، پرنسپلز، پروفیسرز اور AFJOG کے ممبران نے شرکت کی۔وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر خالد مسعود گوندل نے فیکلٹی کے ہمراہ تمام معزز مہمانوں کا استقبال کیا۔
اس موقع پر پرووائس چانسلر پروفیسرکامران خالد خواجہ، رجسٹرار پروفیسرمحمد ندیم، پرنسپل پروفیسر نورین اکمل، ڈائریکٹر کوالٹی انہانسمنٹ سیل پروفیسر بلقیس شبیر، ڈینز پروفیسر منزہ اقبال، پروفیسر عبدالحمید پروفیسر نوید اکبر ہوتیانا، ڈیپارٹمنٹس کے ہیڈز، یونیورسٹی فیکلٹی اور ریٹائرڈ پروفیسرز کی کثیر تعداد بھی موجودتھی۔ پرنسپل پروفیسر نورین اکمل نے انڈر گریجوئیٹ طالبات سے حلف لیا اوررجسٹرار پروفیسرمحمد ندیم نے پوسٹ گریجوئیٹ طلباء و طالبات سے حلف لیا۔
خطبہ استقبالیہ میں وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل نے عزت مآب گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمن اور تمام معزز مہمانوں کو تشریف آوری پر دل کی عطا گہرائیوں سے شکریہ ادا کیا ۔ انہوں نے فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کی خدمات پر روشنی ڈالی ۔ان کا کہنا تھا کہ فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی سے ملحقہ تینوں ہسپتال دکھی انسانیت کی خدمت میں صحت کی بہترین سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔ انہوں نے طلباء اور ان کے والدین کو خصوصی طور پر مبارکباد پیش کی۔ طلباءو طالبات کو مخاطب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ والدین، اساتذہ اور مریضوں کی خدمت کو اپنی زندگی کا نصب العین بنا لیں، یہ آپ کے لیے دنیا اور آخرت میں کامیابی کا سبب بنے گا۔ مالیات کی بجائے، مریضوں کی خدمت کے ذریعے اپنی دنیا اور آخرت کو کامیاب بنائیں۔انہوں نے گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان سے نئے آڈیٹوریم اور نئے آپریشن تھیٹرز کی تعمیر کی درخواست کی۔ انہوں نے موجودہ گورنمنٹ کا فاطمہ جناح گرلز ہوسٹل کے نئے بلاک میں اضافے اور سوئمنگ پول اور سپورٹس کمپلکس کے لیے فنڈز جاری کرنے پر شکریہ ادا کیا۔
وزیرِ صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم نے عزت مآب گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان، سیکرٹری محکمہ صحت پنجاب ڈاکٹر احمد جاوید قاضی ، وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل اور تمام معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیااور فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کی فیکلٹی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ کنووکیشن خوشی کا دن اور ایک علمی یاد ہے۔ جتنا ہو سکے ان لمحوں کو یادگار بنائیں۔آج آپ کی محنت رنگ لائی ہے۔ یونیورسٹی نے آپ کا امتحان لے لیا ، اب گریجویشن کے بعد آپ کا اہم امتحان مریضوں کا علاج ہے ، جس میں آپ کو کامیابی حاصل کرنی ہے۔ایک اچھا ڈاکٹر ہونے کے لئے ایک اچھا انسان ہونا بھی انتہائی ضروری ہے۔ اپنے مریض کو صحت عامہ کی بہتر اور بہتر سہولیات فراہم کرنے کے بارے میں زیادہ سے زیادہ تحقیق کریں ۔فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی خواتین کی ایک پریمیئر یونیورسٹی ہےجہاں بہترین تدریسی ،تربیتی اور تحقیقی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کے نئے "کشمیر آڈیٹوریم "کی تعمیر کا اعلان بھی کیا ۔

عزت مآب گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمن نے وزیرِ صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم ،سیکرٹری محکمہ صحت پنجاب ڈاکٹر احمد جاوید قاضی ، وائس چانسلر ی پروفیسر خالد مسعود گوندل اور تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ نے طلبہ ہمارا ایک قیمتی اثاثہ ہیں، بے شک آج کا دن ایک یادگار دن ہے اور آپ سب کو آج کے دن بہت بہت مبارک باد۔ہم آپ کی کامیابی پر انتہائی خوش ہیں ہے ۔ آج آپ سب نے علم کا خزانہ اکٹھا کیاہے ۔آپ کی کامیابی اس ملک کی اور انسانیت کی کامیابی ہے۔آپ لوگ ہمارے معاشرے کے ذہین طالب علم ہیں۔ یہ ایک خوش آیند بات ہے کہ ہمارے ملک کے میڈیکل کالجز اور یونیورسٹیز میں سو فیصد میرٹ پر میں داخلہ دیا جاتا ہے۔ آپ کی کامیابی میں اہم کردار آپ کے رویہ اور آپ کے کردار کا بھی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ شکرگزار ہونا بھی بہت اہمیت رکھتا ہے۔ ہمیشہ اپنے رب کا شکر گزار بندہ بن کر رہیں اور اپنے ارد گرد کے لوگوں کا شکریہ ادا کریں ۔ آپ سب لوگ ایک بہترین تعلیمی ادارے کے گریجویٹ ہیں، اسے معمولی نہ سمجھیں۔ جو لوگ مستقل محنت نہیں کرتے ،وہ ترقی کے سفر میں پیچھے رہ جاتے ہیں۔ اسی لیے ضروری ہے کہ آپ مستقل مزاجی کے ساتھ محنت کریں اور ایک دوسرے پر احسان کریں۔ آپ کی زندگی میں مسلسل بہتری تب آئے گی جب آپ مسلسل محنت کریں گے۔مسیحا کا مقام بہت اونچا ہےشعبہ طب ایک بہت معزز پیشہ ہے۔اکثر دیکھنے میں آیا ہے کہ جو لوگ صرف پیسہ بنانے میں لگے رہتے ہیں تو وہ زندگی کے آخر میں یہی کہتے ہیں کہ انہوں نے زندگی ضائع کر دی اور جو لوگ انسانیت کی خدمت میں اپنا وقت صرف کرتے ہیں وہ لوگ لوگ عزت کے ساتھ ساتھ ایک اچھی زندگی گزارتے ہیں۔ تحقیق کسی بھی ادارے کا سب سے اہم جز ہے۔

جیسا کہ قرآن مجید میں ارشاد فرمایا گیا ہے کہ کبھی بھی سنی سنائی بات پر کبھی یقین نہ کریں، تو ہمیشہ تحقیق کریں اور اس کے بعد اپنے کام کو سرانجام دیں۔اُنہوں نے تمام یونیورسٹیز کے وائس چانسلرز کی سیلاب زدہ علاقوں کی بحالی کی بے مثال خدمات کو سراہا۔ آخر میں اُنہوں نے تمام شرکاء کا شکریہ ادا کیا اور انڈر گریجوئیٹ اور پوسٹ گریجوئیٹ طلباء و طالبات کو اور اُن کی والدین کو اس کامیابی پر مبارکباد پیش کی۔
کنووکیشن کے موقع پر ڈاکٹر فاخرہ انور، ڈاکٹر عائشہ ارشد، ڈاکٹر رمزہ طاہر، ڈاکٹر رفعت شاہین، ڈاکٹر اُمِ ایمان، ڈاکٹر فاطمہ مجاہدہ احمد منور، ڈاکٹر امبساط نعیم، ڈاکٹرعائش عظیم، ڈاکٹر نورالعین، ڈاکٹر کشف الضحیٰ، ڈاکٹر انعم ذکاء،ڈاکٹر افرا عروج اور ڈاکٹر ردا فاطمہ کو بہترین کارگردگی پر گولڈ میڈلز سے نوازا گیا –
ڈاکٹر فاخرہ انور نے بہترین گریجویٹ ہونے کا اعزاز بھی حاصل کیا۔
کنووکیشن میں کل 294طلباء و طالبات میں اسناد تقسیم کی گئیں جس میں 285 انڈرگریجویٹ طالبات اور 09پوسٹ گریجویٹ طلبہ و طالبات شامل تھے۔
وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل کی جانب سے محترم گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان ، وزیرِ صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم اورسیکرٹری محکمہ صحت پنجاب ڈاکٹر احمد جاوید قاضی کو اعزازی شیلڈ زبھی پیش کی گئیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button