پاکستانتازہ ترینسیاست

انتقام نہیں چاہتا لیکن قوم کے ساتھ زیادتی کرنے والوں کو معاف نہیں کرسکتا، نواز شریف

لاہور میں پارٹی کے پارلیمانی بورڈ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ اللہ نے مجھے جھوٹے مقدمات سے بری فرمایا ہے کیونکہ یہ جعلی مقدمات ہماری حکومت ختم کرنے کے لیے بنائے گئے تھے۔

میں نے کیا بگاڑا تھا اس بینچ کا جس نے مجھے سسیلین مافیا کہا، کیا ججز کبھی گاڈ فادر جیسے الفاظ استعمال کرتے ہیں۔ مجھے بطور فرد سزا ملی لیکن اصل سزا تو 25 کروڑ عوام کو ملی۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ میں نے کبھی جنرل باجوہ، جنرل فیض یا جنرل راحیل کے خلاف سازش نہیں کی لیکن سازش میں کون کون ملوث تھا انکا سب کو معلوم ہونا چاہیے۔

نواز شریف نے کہا کہ 8 فروری کو ملک میں سب سے بڑی عدالت بنے گی۔ مجھے انتقام سے کوئی غرض نہیں، میرے ساتھ جو کچھ ہوا اس کا حساب ہونا چاہیے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم نے ڈالر کو چار سال باندھ کر رکھا، ہم نے آئی ایم ایف کو خدا حافظ کہ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button