سٹی

چیف ایگزیکٹو لیسکو انجینئر شاہد حیدر کی زیر صدارت فنکشنل ہیڈز کااجلاس

لاہور (خبر نگار)
لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی(لیسکو) میں گزشتہ روز چیف ایگزیکٹوانجینئر شاہد حیدر کی زیر صدارت اجلاس منعقد کیا گیا، جس میں چیف انجینئرمیٹریل مینجمنٹ رمضان بٹ، ڈائریکٹر کسٹمر سروسز رائے محمد اصغر،چیف فنانس آفیسربشریٰ عمران، چیف انجینئر او اینڈ ایم ڈسٹری بیوشن سرور مغل،راجہ محمود، چیف انجینئر ٹی اینڈ جی ظفر،چیف انجینئر پلاننگ عمران، ڈائریکٹر سیفٹی فواد خالداورڈپٹی منیجر سیکیورٹی میجر (ر) عثمان عزیر نے شرکت کی۔
اجلاس کے دوران چیف ایگزیکٹو لیسکوانجینئر شاہد حیدر نے مختلف فنکشنل ہیڈز کو ہدایات جاری کیں کہ مرمت اور ارتھنگ کے کام کو جلد از جلد مکمل کیا جائے، اس حوالے سے کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی، کوئی بھی کوتاہی سامنے آئی تو متعلقہ افسر کے خلاف سخت سے سخت محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
چیف ایگزیکٹو لیسکو نے چیف انجینئرٹی اینڈ جی کو ہدایت کی کہ وہ اپنے سسٹم اور گرڈ کی مرمت اور اپ گریڈیشن پر کام کریں جبکہ ڈائریکٹر لیگل کو ہدایت جاری کی کہ وہ قانونی عمل کو درست طریقے سے سر انجام دیں۔
انجینئر شاہد حیدر نے ڈائریکٹر کسٹمر سروسز کو ہدایت کی کہ نیپراکی جانب سے جاری ہونیوالے شوکاز نوٹس سے متعلق تحقیقات مکمل کرکے اس کا جواب دیں اور اس بارے میں مجھے بھی آگاہ کریں۔
چیف انجینئرمیٹریل مینجمنٹ رمضان بٹ کو ہدایت کی گئی کہ میٹریل کی فراہمی کے عمل میں درپیش مشکلات کو فوری طور پر دور کیا جائے۔

چیف ایگزیکٹو لیسکو نے چیف انجینئر پلاننگ کو ہدایت کی کہ جو فیڈرز مکمل ہوگئے ہیں ان کی چانچ پڑتال کی جائے اور جو فیڈرز تاحال مکمل نہیں ہوئے ہیں ان کو فوری مکمل کیا جائے، انہوں نے کہا کہ پروجیکٹ ڈائریکٹر کنسٹریکشن کی جانب سے فیڈرزفیڈرز سے متعلق پیش کی جانیوالی رپورٹ درست نہیں ہے، رپورٹ میں ایسے فیڈرز بھی درج ہیں جو تاحال مکمل نہیں ہوئے ہیں، اس متعلق سخت سے سخت ایکشن لیا جائے۔
اس موقع پر ڈائریکٹر ایس اینڈ آئی نے بتایا کہ گلشن راوی سب ڈویژن کہ ایل ایس شکیب الحسن کولوڈ بیلسنگ نہ کرنے اور ایس اینڈ آئی ٹیم سے تعاون نہ کرنے پر معطل کرکرکے سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے۔
اجلاس کے دوران ترجمان لیسکو کو ہدایت کی گئی کہ لیسکو کی ویب سائٹ کو بہتراندازمیں چلایا جائے اور سوشل میڈیا اکاؤنٹس جیسا کہ فیس بک، ٹوئیٹر اور انسٹاگرام کو روزانہ کی بنیاد پر اپ ڈیٹ کی جائے اور ان اکاؤنٹس کو عوام کی آگاہی اور ان کے مسائل کو حل کرنے کا ذریعہ بنایا جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button