سٹی

آئی جی پنجاب ڈاکٹر عثمان انور کی ہدایت پر پولیس ملازمین کے سپیشل بچوں کے علاج معالجے کیلئے خصوصی اقدامات جاری

پولیس ملازمین کے سپیشل بچوں کے علاج معالجے کیلئے ’’ہمارے پھول‘‘ پراجیکٹ کامیابی سے جاری ہے۔

سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کا اقوام متحدہ کے ادارے یونیسف سے معاہدہ طے، رجسٹرڈ بچوں کو طبی معائنہ کے بعد علاج معالجہ کی سہولیات بالکل مفت فراہم کی جائی گی۔

لاہور (خبرنگار) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب ڈاکٹر عثمان انور کی ہدایت پر پولیس ملازمین کے مختلف بیماریوں کے شکار سپیشل بچوں کے علاج معالجے کیلئے خصوصی اقدامات جاری ہیں اور اسی سلسلے میں ڈی آئی جی ویلفیئر پنجاب غازی محمد صلاح الدین نے سپیشل بچوں کے علاج معالجے کی سہولیات بارے خصوصی پیغام میں بتایا کہ پولیس ملازمین کے سپیشل بچوں کے علاج معالجے کیلئے ’’ہمارے پھول‘‘ پراجیکٹ کامیابی سے جاری ہے ، اب تک پولیس ملازمین کے 2500 بچوں کی رجسٹریشن مکمل، بیماری کی تشخیص، سکریننگ اور علاج معالجے کا کام جاری ہے ، قوت سماعت سے محروم بچوں کو کوکلئیرامپلانٹ لگوائے، تھیلیسیمیا کے شکار بچوں کو ماہانہ وظیفہ بھی دیا جا رہا ہے ، ضلعی سطح پر سپیشل بچوں کی تھراپی، ادویات، علاج معالجے اور تعلیم کا انتظام کیا گیا ہے۔ حمزہ، صدا اور سندس فاؤنڈیشن کے ساتھ ایم او یوز سائن کیے گ۔
ڈی آئی جی ویلفیئر پنجاب غازی محمد صلاح الدین نے کہاکہ حکومت پنجاب کا سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ بھی سپیشل بچوں کی فلاح و بہبود میں گراں قدر خدمات سر انجام دے رہا ہے اور سپیشل ایجو کیشن ڈیپارٹمنٹ کے زیر انتظام صوبے کے مختلف ریجنز، اضلاع اور تحصیلوں میں 302 ادارے سپیشل بچوں کو سہولیات کی فراہمی کیلئے سرگرم عمل ہیں، سپیشل بچوں کو تعلیم کیلئے ان اداروں میں مفت داخلہ، کتابیں، یونیفارم کے ساتھ ساتھ پک اینڈ ڈراپ کی سہولت فراہم کی جاتی ہے۔۔ ڈی آئی جی ویلفیئرنے مزیدکہاکہ سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کا اقوام متحدہ کے ادارے یونیسف سے معاہدہ طے پایا ہے جس کے تحت ان اداروں میں رجسٹرڈ سپیشل بچوں کو طبی معائن

کروائے جاسکتے ہیں ، تمام والدین اپنے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز، تحصیل اور ٹاؤنز میں ایسے سکولوں کا وزٹ کرکے اپنے بچوں کو داخل کروائیں۔ ڈی آئی جی ویلفیئر پنجاب غازی محمد صلاح الدین نے مزیدکہاکہ پولیس ملازمین کے سپیشل بچوں کے علاج معالجے کیلئے محکمہ پنجاب پولیس اپنا ہر ممکن کردار ادا کرتے رہے گا ۔ 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button