سٹیصحت

عالمی لائف سیورز ڈے، ملک بھر میں BLS ورکشاپس کا انعقاد

پاکستان اسلامک میڈیکل ایسوسی ایشن (پیما) کا تمام شہریوں کے لیے بنیادی لائف سپورٹ ٹریننگ کو لازمی قرار دینے کا مطالبہ

لاہور (خبر نگار)

پاکستان اسلامک میڈیکل ایسوسی ایشن (پیما) نے تمام شہریوں کے لیے بنیادی لائف سپورٹ ٹریننگ کو لازمی قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ تربیت پاکستان جیسے ترقی پذیر ممالک میں عوام کے لیے انتہائی اہمیت کی حامل ہے جہاں ملک کے دور دراز علاقوں میں ہنگامی طبی خدمات نہ ہونے کے برابر ہیں۔
ہفتہ کے روز عالمی لائف سیورز ڈے کے موقع پر، پیما نے ملک بھر کی 150 سے زائد مساجد میں عام لوگوں کے لیے BLS اور CPR کی تربیتی ورکشاپس کا انعقاد کیا، جہاں ماہر ڈاکٹروں نے لوگوں کو اہم طبی ہنگامی حالتوں بشمول کارڈیک اریسٹ یا دل کا دورہ اور سانس کی بندش کے دوران بنیادی زندگی کی معاونت کی تربیت فراہم کی گئی۔
پیما سینٹر کی جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق ان BLS سیشنز سے ہزاروں افراد نے استفادہ کیا۔ یہ تربیتی سیشن پنجاب میں 57مقامات پر، سندھ میں 28، خیبرپختونخوا میں 36، بلوچستان میں 10 اور آزاد کشمیر میں 19 مقامات پر منعقد ہوئے۔ پیما خواتین ونگ نے بھی خواتین اور طالبات کے لیے مختلف مقامات پر ان ورکشاپس کا اہتمام کیا۔
پیما کے مرکزی صدر ڈاکٹر عبدالعزیز میمن نے اس موقع پر کہا کہ لوگوں کی بڑی تعداد کو گھر یا کام کی جگہ پر ہنگامی صورتحال جیسے کارڈیک اریسٹ یا سانس کی بندش کا سامنا کرنا پڑتا ہے، اور وہ زندگی کی بنیادی مدد کی تکنیکوں سے عدم آگاہی کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔ BLS ٹریننگ کے ذریعے بہت سی جانیں بچائی جا سکتی ہیں جو سیکھنا نہایت آسان ہے۔ ہم سب کے پاس BLS کے بارے میں معلومات کا ہونا ضروری ہے کیونکہ یہ زندگیاں بچانے میں بہت ممدو معاون ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button