جرم و سزاسٹی

لیسکو کی انسداد بجلی چوری مہم چھٹی کے روز بھی جاری، 167بجلی چوروں کے خلاف مقدمات درج،30 گرفتار

لاہور (خبر نگار)
وفاقی حکومت کی ہدایت پر چیف ایگزیکٹو انجینئر شاہد حیدر کی زیر نگرانی جاری انسداد بجلی چوری مہم چھٹی کے روز بھی جاری رہی، گزشتہ24گھنٹوں کے دوران 167بجلی چوروں کے خلاف مقدمات درج کرکے 30ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا۔ ترجمان لیسکو کی جانب سے جاری ہونیوالے اعلامیہ کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ریجن بھر میں 238کنکشنز بجلی چوری میں ملوث پائے گئے، 237بجلی چوروں کے خلاف ایف آئی آرز کی درخواستیں متعلقہ تھانوں میں دائرکی گئیں۔ پکڑے جانے والے کنکشنز میں ایک انڈسٹریل،8کمرشل اور229 ڈومیسٹک کے کنکشنز تھے۔ تمام کنکشنز منقطع کرکے ان کو331524(تین لا کھ اکتیس ہزارپانچ سوچوبیس) یونٹس ڈٹیکشن بل کی مد میں چارج کئے گئے ہیں جن کی مالیت 14,326,932(ایک کروڑترتالیس لاکھ چھبیس ہزارنو سوبتیس) روپے ہے۔
بجلی چوروں کیخلاف کئے جانے والے آپریشن میں بڑے کمرشل صارفین بھی بجلی چوری میں ملوث پائی گئے۔ ان تمام کے کنکشنز بھی منقطع کئے گئے اور ان کو ڈٹیکشن یونٹس چارج کئے گئے۔داروغہ والا کے علاقے بلال پارک میں کنکشن کو9041یونٹس (352050) روپے،اعظم گارڈن کے علاقے میں کنکشن کو8425یونٹس، (300000)روپے،ایبٹ روڈ کے علاقے میں 4387 یونٹس285155 روپے اورمہرفیاض کالونی کے علاقے میں ایک کنکشن کو5399یونٹس209950کی رقم چارج کی گئی ہے۔
44 روز سے جاری انسداد بجلی چوری مہم کے دوران اب تک کل6684ملزمان کو گرفتار کیا گیا، مجموعی طور پر20105 کنکشن بجلی چوری میں ملوث پائے گئے،19899کنکشن کیخلاف ایف آئی آر کی درخواستیں جمع کروائی گئیں جن میں سے19116درخواستیں رجسٹرڈ ہو چکی ہیں۔بجلی چوروں کو اب تک41,787,455(چار کروڑسترہ لاکھ ستاسی ہزارچار سوپچپن) یونٹس چارج کئے گئے ہیں جن کی مالیت 1,786,135,448(ایک ارب اٹھہترکروڑاکسٹھ لاکھ پنتیس ہزارچارسو اڑتالیس روپے) ہے۔
واضح رہے بجلی چوروں کیخلاف آپریشنز وفاقی پاور ڈویژن کی جانب سے دی گئی ہدایات کے مطابق کیئے جا رہے ہیں اور چیف ایگزیکٹو انجینئر شاہد حیدر بذاتِ خود ان آپریشنز کی نگرانی کر رہے ہیں۔ لیسکو چیف کا کہنا ہے کہ بجلی چوری کے مکمل خاتمے تک بلا تفریق گرینڈ آپریشن جاری رہے گا۔ آپریشن کے دوران بجلی چوروں کے ساتھ ساتھ ان کی سرپرستی کرنیوالے لیسکو افسران و ملازمین کو بھی قانون کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button