پاکستانسٹیسیاست

صوبائی وزیر لائیو سٹاک ابراہیم حسن مراد کی ڈیری ایشیا ایکسپو 2023 کی اختتامی تقریب میں شرکت

نمائش کے انعقاد سے کسانوں کو جدید ٹیکنالوجی سے آگاہی ملے گی۔ عوام کو ٹرانسپورٹ کی معیاری سہولتوں کے لئے کوشاں ہیں۔ ابراہیم حسن مراد
لاہور (خبر نگار) صوبائی وزیر لائیو سٹاک، ٹرانسپورٹ اور مائنز اینڈ منرلز ابراہیم حسن مراد نے دو روزہ ڈیری ایشیا ایکسپو کی اختتامی تقریب میں خصوصی طور پر شرکت کی ۔ انہوں نے سو سے زائد مختلف اسٹالز کا معائنہ کیا اور وہاں آئے ہوئے لوگوں سے بات چیت کی تاکہ لوگوں کے ڈیری پراڈکٹس کی جانب رجحان کا پتا چل سکے۔ آرگنائزر حافظ محمد وسیم نے صوبائی وزیر کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ دو روزہ ڈیری ایشیاء ایکسپو میں لگ بھگ پچاس ہزار افراد نے شرکت کی ۔ اس میں فیڈنگ ، بریڈ نگ،مشینری، آلات ،ادویات اور دیگر شعبوں سے متعلقہ بڑی تعداد میں کمپنیوں نے اپنی مصنوعات کے اسٹالز لگائے جبکہ سرکاری اداروں کے ساتھ فلاحی اداروں کے اسٹالز بھی لگائے گئے ۔ ڈیری فارمرز اور لائیو سٹاک فارمرز کی مختلف ایسوسی ایشنز کے ساتھ ساتھ ویٹرنری ڈاکٹروں کی تنظیموں کی معاونت بھی رہی اور بلاشبہ یہ پاکستان کی تاریخ میں ڈیری، لائیو سٹاک اور ایگریکلچر کی سب سے بڑی نمائش ہے۔
اس موقع پر میڈیا نمائندگان سے بات چیت کرتے ہوئے صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ ڈیری ایشیا ایکسپو جیسی نمائش کا اہتمام ڈیری انڈسٹری میں جدت اور ترقی لانے میں مددگار ثابت ہو گا۔ انہوں نے کہا بلاشبہ ڈیری اور لائیو سٹاک پاکستان کا بہت اہم سیکٹر ہے۔ڈیری اور لائیو سٹاک ہماری دیہی آبادی کا اہم جزو ہے۔ اس نمائش کے انعقاد سے کسانوں کو جدید ٹیکنالوجی سے آگاہی ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ بڑی خوش آئند بات ہے کہ اس نمائش میں ایسی کمپنیاں بھی موجود ہیں جو مکمل مشینری پاکستان میں تیار کر رہی ہیں۔ اس کے علاوہ یہاں ایکسپورٹرز اور امپورٹرز بھی موجود ہیں۔ یہ نمائش سب کو ایک پلیٹ فارم مہیا کر رہی ہے۔ سموگ کے حوالے سے صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کی ہدایت پر ٹرانسپورٹ کو ماحول دوست بنایا جارہا ہے اورصوبے کے عوام کو ٹرانسپورٹ کی معیاری سہولتوں کے لئے کوشاں ہیں۔ وزیر اعلیٰ پنجاب کی قیادت میں پنجاب حکومت نے ٹرانسپورٹ شعبہ کی آٹو میشن کے لئے انقلابی اقدام کیے ہیں۔ پنجاب کے تمام اضلاع میں وہیکل انسپکشن سرٹیفکیٹ سٹیشن قائم کیے جارہے ہیں۔ لاہور میں الیکٹرک بسیں چلانے کیلئے ضروری امور طے کر لیے گئے ہیں۔حال ہی میں پنجاب حکومت اور نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس کے درمیان معاہدہ طے پا گیا ہے اور اب فٹنس سر ٹیفکیٹ اور روٹ پرمٹ کے بغیر گاڑیوں کی موٹروے اور ہائی ویز پرداخلے پر پابندی ہوگی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ ٹرانسپورٹ اور موٹروے پولیس کے درمیان وہیکلز فٹنس اور روٹ پرمٹ کے حوالے سے معلومات کا تبادلہ ہوگا جبکہ غیر رجسٹرڈ چنگ چی رکشاؤں کو فری رجسٹریشن کیلئے ایک ماہ کی مہلت دی جائے گی اور یہ مدت گزرنے کے بعد غیر رجسٹرڈ چنگ چی رکشاؤں کو روڈ پر نہیں آنے دیا جائے گا۔ اس موقع پر موجود تھے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button