جرم و سزاسٹی

محکمہ جنگلی حیات پنجاب نے جنگلی جانوروں کے ماحولیاتی کردار اور فوائد پر مبنی وڈیو سو شل میڈیا پر وائرل کردی

شعبہ نشر و اشاعت کی تیار کردہ وڈیو میں عوام کی بھرپور آگاہی کیلئے وائیٹ بورڈ اینیمیشن کا استعمال کیا گیا ہے

لاہور (خبر نگار)
سیکرٹری جنگلات، جنگلی حیات و ماہی پروری پنجاب مدثر وحید ملک کی خصوصی ہدایت پر ڈائریکٹر جنرل جنگلی حیات و پارکس پنجاب مبین الٰہی کی زیر قیادت محکمہ کے شعبہ نشر و اشاعت نے جنگلی جانوروں کے ماحولیاتی کردار اور فوائد پر مبنی ایک پر کشش وڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کردی ہے۔دو منٹ سینتیس سیکنڈ دورانیے پر مشتمل اس وڈیو میں وائیٹ بورڈ اینیمیشن کاا ستعمال کیا گیا ہے وڈیو میں بتایا گیا ہے کہ انسان ابتدائے آفرینش ہی سے جنگلی حیات کے ثمرات سے بہرہ مند ہوتا چلا آرہا ہے۔جنگلی پرندے تیتر، تلیئر، ہُدہُد، بگلے، کبوتراور فاختائیں فصلات سے زہریلے کیڑوں مکوڑوں کو کھا کر انہیں نقصان سے بچاتے ہیں۔ لگڑ بگڑ، گدھ، چیلیں اور کوے مردار اور گندی آلائیشیں کھا کرماحول کو تعفن سے محفوظ رکھتے ہیں۔ باز اور الو چوہوں کا شکار کرکے اناج کو ضائع ہونے سے بچاتے ہیں۔ پینگولن اور سانپوں کی متعدد اقسام کیڑے مکوڑے اور دیمک کھا کر، چمگادڑ اور چھپکلی مچھر کھا کر جانداروں کو ان کے مضر اثرات سے محفوظ رکھتے ہیں جبکہ کچھوے اور مینڈک پانی کی کثافتیں چٹ کرکے اسے صاف و شفاف بنا کر اپنا ماحولیاتی کردار ادا کرتے ہیں۔جنگلی جانور و پرندے سرمایہ فطرت ہیں۔ زمین پر اللہ عزوجل کی عطاء کردہ ان نعمتوں سے ہمیں ان گنت فوائد حاصل ہورہے ہیں۔ جنگلی جانور و پرندے ہمیں تفریح اور پر لحم خوراک مہیا کرتے ہیں۔ علم و تحقیق میں معاون ہیں۔ جنگلات کے فروغ کا باعث اور زمین کی زرخیزی بڑھاتے ہیں۔ قدرتی ماحول کو دلنشین اور خوشگوار بناتے ہیں۔ ادویہ سازی، صنعتی و زیبائشی مصنوعات کی تیاری میں کام آتے ہیں۔ سیاحت و تجارت کے ذریعے ملکی زرمبادلہ بڑھاتے ہیں اور ہماری ثقافت کے امین ہیں لیکن اس کے برعکس انسان اندھا دھند شکار، جنگلات کی بے دریغ کٹائی، ماحول دشمن زرعی ادویات کا استعمال اور ویٹ لینڈز کو آلودہ کرکے جنگلی حیات اور اس کے مساکن تباہ کر رہا ہے جس سے کرہ ارض کے ماحولیاتی توازن میں زبردست بگاڑ پیدا ہورہا ہے۔لہٰذاوقت کا تقاضا ہے کہ ہم اس انمول عطیے کے تحفظ و فروغ کیلئے میدان عمل میں آئیں اور اسے اپنی ملی و مذہبی ذمہ داری سمجھتے ہوئے حکومت کے شانہ بشانہ اپنی کوششوں اور تعاون کا آغاز کریں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button