پاکستانتازہ ترینسیاست

صدر استعفی دیں گے یا نہیں اس کا علم نہیں، نگران وزیر اطلاعات

پریس کانفرنس کرتے ہوئے نگران وزیر اطلاعات مرتضیٰ سولنگی اور نگران وزیر قانون احمد عرفان اسلم کا کہنا تھا کہ صدرمملکت کے پاس فیصلے کیلئے دس دن کا وقت ہوتا ہے۔

صدر کو بل پر اعتراضات لگا کر واپس بھیجنا چاہیے تھا، آئین میں آرٹیکل 75 موجود ہے جسے سب پڑھ سکتے ہیں ، دوران صدارت ان کے خلاف کوئی کارروائی یا تفتیش نہیں ہوسکتی، کسی صورت نہیں چاہیں گے ایوان صدر جا کر ریکارڈ قبضے میں لیں۔

ہمارے بات کرنے کا مقصد تحقیقات نہیں وضاحت پیش کرنا ہے،صدر کے ٹویٹ میں 2 بلز پر بات کی گئی ہے، کوئی ابہام تھا تو وزارت قانون کی پریس ریلیز کے بعد ختم ہو گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button