Uncategorized

کاش سیاستدانوں نے ریاست کوسیاست کامحور بنایاہوتا: محمد ناصر اقبال خان

اگرانہوں نے اپنی مجرمانہ روش نہ بدلی توتاریخ انہیں معاف نہیں کرے گی

میاں ثاقب نثار کامیڈیا ٹرائل کرنیوالے کردار اپنے دامن سے داغ نہیں دھوسکتے

لاہور(خبر نگار)
انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی چیئرمین محمد ناصر اقبال خان نے کہا ہے کہ کاش سیاستدانوں نے ریاست کوسیاست کامحور بنایاہوتا۔جوسیاست اپنی نحوست کے سبب ریاست کیلئے بوجھ بن جائے ایک دن اس کاوجود نابود ہوجاتا ہے۔کیامعلوم ملک کے مقتدر طبقات کی انا مزید کیا کچھ فنا کرے گی۔ اگرانہوں نے اپنی مجرمانہ روش نہ بدلی توتاریخ انہیں معاف نہیں کرے گی۔انہیں اپنے شوق اقتدار کیلئے مادروطن کوتختہ مشق بنانے کااختیارکس نے دیا ہے۔ عدالت کیخلاف اعلان بغاوت ایک بڑاسوالیہ نشان ہے، قومی ضمیر کسی قومی مجرم پرہرگز رحم نہیں کرے گا۔اپنے ایک بیان میں محمد ناصراقبال خان نے مزید کہا کہ چیف جسٹس (ر)میاں ثاقب نثار کامیڈیا ٹرائل کرنیوالے کردار اس طرح اپنے دامن سے داغ نہیں دھوسکتے۔ماضی میں حکمران قوم کو ڈیم کی آڑ میں ڈیم فول بناتے رہے، مادروطن کے جانثار میاں ثاقب نثار کے سوا کسی دوسرے کی طرف سے ڈیم کی تعمیر کیلئے تدبیر نہیں کی گئی۔انہوں نے کہا کہ میاں ثاقب نثار نے کسی حکومت کا کوئی منصوبہ نہیں روکا لہٰذاء جو شعبدہ باز اپنے وعدے وفا اور ڈ یلیور کرنے میں ناکام رہے وہ عوام کی آنکھوں میں دھول نہیں جھونک سکتے۔میاں ثاقب نثار کیخلاف ہرزہ سرائی کرنیوالے ناکام اورنااہل کرداروں کو دنیا کی کوئی طاقت آئندہ انتخابات میں رسوائی سے نہیں بچاسکتی۔انہوں نے کہا کہ ملک کو درپیش بدترین آئینی بحران اور معاشی عدم استحکام سیاسی قوتوں کے درمیان تناؤ اورتصادم کا شاخسانہ ہے،اگر وہ اب بھی نہیں سنبھلیں گے توپھر ان کی سیاست قصہ ماضی بن جائے گی۔انہوں نے کہا کہ سیاستدان ملک کودرپیش بحرانوں سے نجات کاراستہ تلاش کریں ورنہ ان کیلئے بندگلی سے باہرنکلنا مزید دشوار ہوجائے گا۔آئین تین ماہ کے اندر ا لیکشن کاپابندکرتا ہے توپھر باقی کسی آپشن کی کوئی اہمیت نہیں رہ جاتی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Related Articles

Back to top button